ترقی کا تصور یکساں نہیں ہوتا

کالم: زبیدہ مصطفیٰ

پاکستان میں بہت سی ایسی ٹیکنالوجیز، ترقی کے نام سے درآمد کی گئی ہیں، جو یہاں استعمال بھی نہیں ہو سکتیں کیونکہ وہ یہاں کے حالات سے مطابقت نہیں رکھتیں

ایک سیمینار میں میری ملاقات ایک نوجوان سے ہوئی جو اپنے برطانیہ کے ویزے کا انتظار کر رہا تھا تا کہ اپنی اعلیٰ تعلیم کے لیے لیڈز(Leeds) روانہ ہو سکے۔ میں نے اس سے دریافت کیا کہ وہ کس مضمون میں اپنی تعلیم جاری رکھنا چاہتا ہے؟ اس کا جواب دو الفاظ پر مبنی تھا: ڈیویلپمنٹ اسٹڈیز (Development Studies)۔

اس سے پہلےکہ میں مزید کچھ کہتی، اس نے مجھے بتایا، “چونکہ میں ترقیاتی شعبے میں کام کرتا رہا ہوں اور پہلے بھی بیرون ملک اس مضمون کے حوالے سے تعلیم حاصل کر چکا ہوں، تو میں یقین سےکہہ سکتا ہوں کہ جو بھی وہاں پڑھوں یاسیکھوں ضروری نہیں کہ ہمارے ملکی حالات سے مطابقت بھی رکھتا ہو”-

Source: DW